Recent Comments

No comments to show.

ول سمیڈ کے 97 رنز بھی کام نہ آئے شعیب ملک نے میچ وننگ اننگز کھیل کر کوئٹہ گلیڈیٹرز کو شکست دے دی! حسین طلعت کی بھی دھماکے دار بیٹنگ!

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 7 کے دوسرے میچ میں پشاور زلمی نے 191 رنز کا ہدف 19 اعشاریہ 4 اوورز میں 5 وکٹ پر حاصل کرلیا۔

کپتان شعیب ملک 45 کے ساتھ کریز پر موجود ہیں جبکہ اُن کے ساتھ شرفان روتھی فورڈ 10 رنز پر ناٹ آؤٹ ہیں۔

پشاور کے آخری آؤٹ ہونے والے بیٹر حسین طلعت تھے جو 158 کے اسکور پر 29 گیندوں پر 52 رنز کی برق رفتار اننگز کھیل کر لوٹے، اُن کی وکٹ جیمز فالیکنر نے اپنے نام کی۔

اس سے قبل یاسر خان 30، ٹوم کوہلر 22 اور حیدر علی 19 رنز بناکر پویلین لوٹ گئے۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی طرف سے محمد نواز نے 4 اوورز میں 44 رنز کے عوض 3 وکٹیں اپنے نام کیں۔

اس سے قبل کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 20 اوورز میں 4 وکٹ کے نقصان پر 190 رنز بناکر مقابل پشاور زلمی کو 191 رنز کا ہدف دیا۔

کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں پی ایس ایل کا رنگا رنگ ایونٹ اپنی آب و تاب کے ساتھ جاری ہے، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے دونوں اوپنر نے پہلی وکٹ پر 155 رنز کی زبردست شراکت قائم کی۔

دونوں کھلاڑیوں نے پشاور زلمی کے بولرز کی ایک نہ چلنے دی اور ساڑھے 15 اوورز میں 155رنز بنائے، اس دوران دونوں ہی کھلاڑیوں نے کئی شاندار اسٹروکس کھیلے اور اپنی اپنی نصف سنچریاں مکمل کیں۔

کوئٹہ کے اوپنر احسن علی 46 گیندوں پر 73 رنز کی اننگز کھیل کر عثمان قادر کا شکار بنے، انہوں نے اس دوران 8 چوکے اور 3 چھکے لگائے۔

اسی اوور میں عثمان قادر نے بین ڈنکیٹ کو بغیر کوئی رنز بنائے پویلین بھیج دیا یوں کوئٹہ کی دو وکٹیں 156 رنز پر گر گئیں۔

کوئٹہ کی تیسری وکٹ 20 ویں اوور کی پہلی گیند پر گری، افتخار احمد صرف 8 رنز بناکر ثمین گل کا پہلا شکار بنے۔

کوئٹہ کے اوپنر ویل سمیڈ جنہوں نے 97 رنز کی خوبصورت اننگز کھیلی، 62 گیندوں پر 11 چوکے اور 4 چھکے لگائے، وہ اننگز کی آخری گیند پر ثمین گل کا شکار بن گئے۔

یوں کوئٹہ نے 4 وکٹ پر 190 رنز اسکور بورڈ پر سجادیے، پشاور زلمی کی طرف سے عثمان قادر اور ثمین گل نے 2، 2 وکٹیں اپنے نام کیں۔

دونوں ٹیموں کے کپتان ٹاس کے لیے میدان میں اترے۔ پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو بیٹنگ کی دعوت دی۔

میچ کےلیے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی حتمی الیون میں کپتان سرفراز احمد ،ویل سمیڈ، احسن علی، بین ڈنکیٹ، افتخار احمد، محمد نواز، سہیل تنویر ،جیمز فاکنر،عاشر قریشی، محمد حسنین اور نسیم شاہ شامل ہیں۔

پشاور زلمی کی طرف سے ٹوم کوہلر، یاسر خان، حیدر علی، شعیب ملک، حسین طلعت، شرفان رتھرفورڈ، بین کٹنگ، سہیل خان، پٹ براؤن، ثمین گل اور عثمان قادر میدان میں اترے ہیں۔

کورونا وائرس نے دونوں ہی ٹیموں کو شدید نقصان پہنچایا ہے، ایک طرف سے وہاب ریاض نہیں کھیل رہے ہیں، ان کی جگہ شعیب ملک نے قیادت سنبھالی ہے۔

دوسری طرف سرفراز احمد کو لیجنڈ آل راؤنڈر شاہد آفریدی کی کمی درپیش ہے، ایسے میں عمر اکمل کی واپسی کا امکان سامنے آیا تھا۔

پشاور زلمی اس ایونٹ کی واحد ٹیم ہے، جسے 4 مرتبہ فائنل کھیلنے کا اعزاز حاصل ہے جبکہ یہ ٹیم 2017ء میں ٹرافی بھی اٹھاچکی ہے۔

پی ایس ایل 6 کے فائنل میں ملتان سلطانز ہی نے پشاور زلمی کو شکست سے دوچار کیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes