Recent Comments

No comments to show.

مونگ پھلی سے ہاتھ نہ روکنے والے خبردار ہو جائیں یہ صحت کو یہ خطرناک نقصان پہنچا سکتی ہے!

صحت
مونگ پھلی سردیوں کے موسم میں بہت زیادہ کھائی جاتی ہے اس لیے اسے موسم سرما کا پھل بھی کہا جاتا ہے۔ اس میں موجود وٹامن ای، وٹامن بی 6 ،میگنیشیم، فاسفورس، پوٹاشیم، زنک اور آئرن جیسے عناصر نہ صرف جسم کو گرم رکھتے ہیں بلکہ اسے غذائیت بھی فراہم کرتے ہیں۔ اگرچہ مونگ پھلی کو صحت کے لیے بہت فائدہ مند چیز سمجھا جاتا ہے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ اس کا زیادہ استعمال جسم کو بڑا نقصان بھی پہنچا سکتا ہے۔

اس آرٹیکل میں مونگ پھلی کی زیادہ مقدار کھانے کے کچھ ایسے نقصانات کو شامل کیا جا رہا ہے جن کے بارے میں مونگ پھلی سے ہاتھ نہ روکنے والوں کا جاننا بہت ضروری ہے۔

جگر کو خراب کرتی ہے

ایک جدید تحقیق کے مطابقکے مطابق مونگ پھلی جسم میں افلاٹوکسن کی مقدار بڑھاتی ہے جو کہ ایک نقصان دہ مادہ ہے۔ بھوک نہ لگنا اور آنکھوں کا پیلا ہونا افلاٹوکسن زہر کی علامات ہیں جو کہ جگر کے نقصان یا یرقان کی علامت ہو سکتی ہیں افلاٹوکسین کا زہر نہ صرف آپ کے جگر کو نقصان پہنچا سکتا ہے بلکہ یہ جگر کے کینسر کا سبب بھی بن سکتا ہے۔

گھٹیا کا درد

گٹھیا کے مریضوں کو مونگ پھلی سے بچنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ مونگ پھلی میں موجود لیکٹینز کی وجہ سے ایسے مریضوں میں سوزش کا مسئلہ بڑھ جاتا ہے۔ یہ قبض، تیزابیت اور سینے کی جلن کو بھی تیز کر سکتا ہے۔

فائٹک ایسڈ کی مقدار زیادہ ہے

مونگ پھلی میں فائٹک ایسڈ نامی عنصر پایا جاتا ہے، جو جسم میں ضروری غذائیت کو کم کرتا ہے۔ فائٹک ایسڈ جسم میں آئرن اور زنک کی مقدار کو کم کرتا ہے۔ متوازن غذا یا باقاعدہ گوشت کھانے والوں کو اس سے زیادہ پریشانی نہیں ہوگی۔ لیکن جو لوگ گوشت بلکل نہیں کھاتے ہیں، انہیں پریشانی ہو سکتی ہے۔

الرجی ہو سکتی ہے

– زیادہ مونگ پھلی کھانے سے لوگوں کو جلد کی پریشانی ہو سکتی ہے۔ اس سے جلد میں خارش اور خارش کا مسئلہ بڑھ سکتا ہے۔ منہ پر خارش اور چہرے پر سوجن ہو سکتی ہے۔ مونگ پھلی فطرت میں گرم ہوتی ہے، اس لیے اسے صرف سردیوں میں اور مناسب مقدار میں کھانا ہی محفوظ سمجھا جاتا ہے۔

اومیگا فیٹی ایسڈ کی کمی

مونگ پھلی اومیگا 6 فیٹی ایسڈز سے بھرپور ہوتی ہے جو کہ جسم کے لیے انتہائی فائدہ مند ہے۔ لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کے زیادہ استعمال سے جسم میں اومیگا تھری فیٹی ایسڈز کی مقدار کم ہوجاتی ہے جس سے صحت کو کئی طریقوں سے نقصان پہنچتا ہے۔

کتنی مونگ پھلی کھانی چاہیے

ماہرین کے نزدیک اگر آپ کو مونگ پھلی کھانے سے الرجی نہیں ہے تو آپ روزانہ 50 سے 100 گرام مونگ پھلی کا استعمال کر سکتے ہیں لیکن یہاں یہ بات ذہن میں رکھنا ضروری ہے کہ مونگ پھلی کے اندر جہاں بیشمار ایسے غذائی اجزا شامل ہیں جو صحت کے لیے بیحد مفید ہیں وہاں مونگ پھلی ایک ہائی کیلوریز رکھنے والی غذا ہے اور اس کے صرف 100 گرام میں 567 کیلوریز پائی جاتی ہیں اس لیے اپنی متوازن غذا کے اندر ان کیلوریز کا دھیان رکھنا بھی بہت ضروری ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes